February 17, 2012

A bill has been tabled in the US House of Representatives calling upon Pakistan to recognize the right of self-determination for Balochistan.

Rep. Dana Rohrabacher (R-CA) introduced a House Concurrent Resolution that the Balochi nation has a historic right to self-determination.

The bill states that the Balochi people “have the right to self-determination and to their own sovereign country; and they should be afforded the opportunity to choose their own status.”

“The Balochis, like other nations of people, have an innate right to self-determination,” says Rohrabacher. “The political and ethnic discrimination they suffer is tragic and made more so because America is financing and selling arms to their oppressors in Islamabad.”

Reps. Louie Gohmert (R-TX) and Steve King (R-IA) have also signed on as original co-sponsors of the bill.

Rep. Rohrabacher is Chairman of the House Foreign Affairs Subcommittee on Oversight and Investigations.

43 Comments

  1. Bawa says:

    جب ایجنسیاں لوگوں کو گھروں سے اٹھا کر لے جائیں اور قتل کرکے لاشیں سڑکوں پر پھیکنا شروع ہو جائیں اور نہ کوئی سوال کرے اور نہ کوئی جواب دے تو پھر کچھ نہ کچھ تو ہونا ہی ہوتا ہے

    ویسے بھی چین کے بڑھتے ہوئے قدم روکنے کے لیے بلوچستان کو آزاد کروانا اور وہاں ڈیرے جمانا امریکہ کی اجارہ داری قائم رکھنے کے لیے ضروری ہے

    بلوچستان کے معاملات میں ہماری اجتماعی بے حسی اور امریکہ کی مجبوری معاملات کو کسی بھی نہج پر پہنچا سکتی ہے

    ساز کی شوخیاں بتاتی ہیں کوئی نغمہ مچلنے والا ہے
    اب بھی اچھا ہے گر سنبھل جاو وقت کروٹ بدلنے والا ہے

  2. نواب اکبر بگٹی کی شہادت کے بعد آئ ایس آئ نے خان آف قلات کو قتل کرنے کا منصوبہ بنایا تو وہ پاکستان سے فرار ہو کر برطانیہ آگیے اور سیاسی پناہ کی درخواست دے دی . خان آف قلات پاکستان ، افغانستان اور ایران کے سب بڑے قبائلی سردار ہیں اور تاریخی طور پر تمام بلوچ سردار ان کو جواب دہ ہیں . پاکستانی فوج بجائے اس کے کھ معاملے کی نزاکت کو سمجھتی خان آف قلات کی سیاسی پناہ میں روڑے اٹکاتی رہی . بلآخر انھیں برطانوی دارلامراء میں آخری اپیل کے بعد سیاسی پناہ مل سکی . زرداری اور واجد شمس الحسن نے ان سے وطن واپسی کی ذاتی درخواستیں کیں لیکن ان کے سامنے ماضی کی وہ مثالیں تھیں جب بلوچ سرداروں کو دھوکے سے مارا گیا . خان آف قلات کے پاس چمڑے ، کپڑے اور بوسیدہ کاغذوں پر لکھی گئی وہ تمام تر تاریخی دستاویزات ہیں جو ان کو بلوچستان کا حکمران ثابت کرتی ہیں . سرکاری دانشوروں کی لکھی تاریخ کے برعکس ان کے پاس وہ تمام کاغذات موجود ہیں جو پاکستانی فوج کے بلوچستان پر غاصبانہ قبضے کو ظاہر کرتے ہیں . یہی وہ دستاویزات ہیں جو آنے والے دنوں میں عالمی اداروں میں پیش ہونگی . مشرقی تیمور ، یوگوسلاویہ ، اور سوڈان وغیرہ کے تجربات کے بعد عالمی برادری ایسی صورتحال میں مداخلت کے بہت سے حقوق حاصل کر چکی ہے . بلوچستان سے ملنے والی مسخ شدہ لاشیں بلوچستان کی آزادی کے حق میں جیتی جاگتی گواہیاں ہیں
    مشرقی پاکستان کے بعد اب بلوچستان بھی ہماری بہادر افواج کی نذر ہو رہا ہے

  3. ezadyarkhan says:

    I dont know why our media glorify Nawab Akbar Bugti ??

    Akbar Bugti said by him self,” first murder i had done at the age of 8 and i don’t remember exactly how many people i have killed”. All the viewer can see his interview and he pretends he was the god but nature reminds him what he was !!

    Many people think he was A freedom fighter, sitting in 5 star cave on a sofa, eating roasted lamps !! this is the way freedom fighter fights !!!??

    100 of thousands Bugti was displaced and misplaced because of him, still many are living in surrounding of Dera Ghazi khan and Multan.

    His sons and grand sons are studying in US (Shahzain Bugti) but not interested in education of poor people living in Dera Bugti !!!

    When he was alive all the abduction from Kashmoor to Multan, he was the arbitrator , Why ??!!

  4. EasyGo says:

    قرار داد ميں مزيد کہا گيا ہے کہ بلوچستان اس وقت ايران، افغانستان اور پاکستان ميں تقسيم ہے
    جنگ نیوز

    ========

    آج ہی ان تینوں ملکوں کے صدور پاکستان میں موجود تھے
    اور ہاتھوں میں ہاتھ ڈالے پتہ نہیں کیا پیغام دینا چاہ رہے تھے
    کیا یہ محض اتفاق تھا یا انھیں ادراک ہے مائی باپ کی طرف سے جو کھیل شروع ہونے جا رہا ہے

  5. expakistani says:

    well for Americans Baluchistan is important that how they put in priority
    Kashmir Palestine and others are not in any priority list .

    People of Pakistan need to look how they are treating Balochistan and Baloch people…. if things dont work out good, Aermicans can help for independent Balochistan.

  6. edcoym says:

    why balochistan is important for outsiders?? There are atleast 5 big reasons, by the way kashirmis, Sikhs,mizoramis, nagalandis, jharkhandis, chatisgaris, etc., are kidnapped by RAW and killed, why not bringing trouble for india , it only brings the trouble for Pakistan haan?? Bahrainis and yemanis are kidnapped and killed too by their khufia idaarey???

  7. edcoym says:

    Just look the history of these sardars, choudaries and wadairas of Balochistan, sindh, punjab and kpk who they were? They were agents of British Raj, india finished those bas****** in early time by nehru but Pakistan didn’t, so Pakistan and it’s awam cutting the fruits of it today.

  8. short life endless plans says:

    Some things about Baluchistan has to be done right now. Agencies must step back and CJI must take action against those responsible for the extra judicial arrests and killings. Something is planned for the year 2012 by those who secretly rule the world. the same elite that J F Kennedy mentioned in his last speech and the same elite that had him killed. This makes me nervous.

  9. ukpaki1 says:

    salam
    zionist’s notorious agenda is very clear now. US think tanks have already released the new map of world few years ago, in which balochistan was shown as a separate state as ”greater balochistan”.
    US has a history that wherever they find any natural resources they really make a real mess in that area. they found cocaine in aghanistan they invaded it, which made their generals millionarire, for oil they attacked iraq, they destroyed libya for oil as well, they wanted to leash qaddafi so that he couldn’t execute his plans regarding ”AMF'(african monetary fund) and gold deenar currency which would have been same like euro.
    since balochistan has got more than 3.5 billion dollar worth copper and other resources, that’s y they r after balochistan now. BLA is fully funded and supported by RAW and CIA. baloch militants r being trained by these agencies so that they could fight with army.
    one would say that traitor mush is the biggest responsible for current chaos and anarchy in balochistan as he mishandled bugti’s case.
    May ALLAH bless Pakistan and Pakistanis.

  10. ukpaki1 says:

    PS: GOD forbid if we lose balochistan, it would mean that almost half of pakistan would be gone as balochistan is the 43% of the total area of pakistan with only 5 % population.

  11. ukpaki1 says:

    PS: last year neocon zionists ultimately disintegrated sudan which was the biggest country of the muslim world with respect to area and also sudan is an oil rich country and exports significant amount of oil to china. the evil game of disintegrating states in muslim world is on.

  12. Shirazi says:

    Pakistan is behind Kashmir Jihad for past 20 + years but we couldn’t move any resolution for Kashmir’s independence in US congress. In case of Baluchistan it happened within 10 years.

    Pak Army should learn from Balouch Nationalist how to raise issues on Global platforms. They just couldn’t move beyond 5th February Holiday.

    :)

  13. Qaiser Nadeem says:

    Instead of huffing and puffing here, call Dana Rohrabacher and lobby, condemn whatever you want to do stop this bill from passing which I am sure it won’t go through. This is just political posturing from Republicans, just like military establishment of Pakistan, Pentagon etc. have their moles in US politics and Dana Rohrabacher might be one them, he is American Sh. Rasheed. Republicans want to stop Iran from acquiring nuclear weapons because of strong pressure from AIPAC. And we all know how much Republicans really care about “human rights”, and during the last senate hearing committee their was no Baloch present there, Ali Dayan and some Human rights lawyers.

    He is a staunch Obama opponent and a staunch Mitt Romney supporter.

    His motto is “fighting for freedom and having fun”, enough said.

    Here is his twitter account: https://twitter.com/#!/danarohrabacher
    And this is his office phone# 714-960-6483

    Here is one of his gems:

    During a trip to Iraq in June 2011, he said that Iraq should pay back the U.S. for all the money it had spent since the invasion, when it becomes a wealthy country.

  14. Qaiser Nadeem says:

    Instead of huffing and puffing here, call Dana Rohrabacher and lobby, condemn whatever you want to do stop this bill from getting a majority vote which I am sure it won’t go through. This is just political posturing from Republicans, just like military establishment of Pakistan, Pentagon etc. have their moles in US politics and Dana Rohrabacher might be one them, he is American Sh. Rasheed. Republicans want to stop Iran from acquiring nuclear weapons because of strong pressure from AIPAC. And we all know how much Republicans really care about “human rights”, and during the last senate hearing committee their was no Baloch present there, Ali Dayan and some Human rights lawyers.

    He is a staunch Obama opponent and a staunch Mitt Romney supporter.

    His motto is “fighting for freedom and having fun”, enough said.

    Here is his twitter account: https://twitter.com/#!/danarohrabacher
    And this is his office phone# 714-960-6483

    Here is one of his gems:

    During a trip to Iraq in June 2011, he said that Iraq should pay back the U.S. for all the money it had spent since the invasion, when it becomes a wealthy country.

  15. EasyGo says:

    شائد اغوا شدہ افراد کو رہا کرنے سے
    فوج اور ایف سی کو کنٹرول کرنے سے
    بگٹی کے قتل کا فیئر ٹرائل کرنے سے
    حالات بہتر ہوسکتے تھے، ہو سکتے ہیں

  16. ukpaki1 says:

    salam
    @smsupportmovement wrote:
    سرکاری دانشوروں کی لکھی تاریخ کے برعکس ان کے پاس وہ تمام کاغذات موجود ہیں جو پاکستانی فوج کے بلوچستان پر غاصبانہ قبضے کو ظاہر کرتے ہیں . یہی وہ دستاویزات ہیں جو آنے والے دنوں میں عالمی اداروں میں پیش ہونگی . مشرقی تیمور ، یوگوسلاویہ ، اور سوڈان وغیرہ کے تجربات کے بعد عالمی برادری ایسی صورتحال میں مداخلت کے بہت سے حقوق حاصل کر چکی ہے . بلوچستان سے ملنے والی مسخ شدہ لاشیں بلوچستان کی آزادی کے حق میں جیتی جاگتی گواہیاں ہی
    ____________________________________________________________

    جناب ایس ایم سپورٹ صاحب بلوچستان پاکستان کا مقبوضہ علاقہ تو نہیں رہا کبھی بھی، اس وقت کے خان آف قلات کی قائد اعظم کے ساتھ ایک ہم آہنگی سے بن گئی تھی اور قائداعظم نے کچھ وعدے وغیرہ بھی کیے تھے ان سے تو اس کے بات ہی بلوچستان نے پاکستان سے الحاق کیا تھا ان کی وفات کے بعد غالباً۔ لیکن حقیقت یہ بھی ہے کہ قبائلی سرداروں نے ہمیشہ ریاست کے اندر ریاست کو زندہ رکھا۔ بگٹی کی ملیشیا کو ہی دیکھ لیں اور اسی طرح دوسرے قبائل مری اور مینگل کے پاس جو اسلحہ ہے اتنی بھاری تعداد میں وہ سب کہاں سے آتا رہا تھا، اس کی کڑیاں جوڑنا اتنا مشکل نہیں۔
    بگٹی کو جس طرح قتل کیا گیا وہ چیز ریاستی دہشتگردی کی ضمرے میں آتی ہے اور یہی چیز بنیاد بنی بی ایل اے جیسی تنظیموں کی ابھر کے سامنے کی اور علیحدگی پسندوں اور بیرونی طاقتوں کے شیطانی کھیل کھیلنے کی۔
    آپ نے یوگوسلاویہ اور دوسری مثالیں بالکل صحیح دیں۔ اور یہاں یہ بات بھی قابل غور ہے کہ جب یوگوسلاویہ کو توڑا گیا، تو اس سے پہلے جس بندے کو وہاں کا نمائندہ بھیجا گیا، اسی بندے کو بعد میں پاکستان میں پاکستان اور افغانستان کا خصوصی نمائندہ مقرر کیا گیا، جی ہاں مرحوم رچرڈ ہالبروک۔

  17. jazoo says:

    This Bill shows they have long term plans for the region.
    Quiting barren Afghanistan for lucrative Baluchistan.

    Side benefits
    Keeping an eye on Iran, Taliban and Islamic Bomb of Pakistan

  18. rangbaaz says:

    بلوچستان کی صورت حال پر کالم نگارعامر خاکوانی کاجواب
    Published on 16. Feb, 2012

    عامر خاکوانی روزنامہ ایکسپریس کے کالم نگار ہیں۔ انہوں نے ٹاپ سٹوری آن لائن پر امریکی کانگریس کی ایک سب کمیٹی کی بلوچستان پر پبلک ہیرنگ پر چھپنے والی ایک رپورٹ پر مفصل تبصرہ کیا تھا جس کے لیے ہم ان کے شکرگزار ہیں۔ دو دن کی تاخیر ہونے پر معذرت۔ عامر کا تبصرہ ذیل میں شائع کیا جا رہا ہے۔
    _________________________________
    بلوچستان کے حوالے سے آدھا سچ ہی سامنے آتا ہے، دونوں فریقین کی جانب سے ۔ کوئی بھی فریق مکمل تصویر پیش نہیں کر پا رہا۔ بدقسمتی سے برادرم ندیم کی رپورٹ بھی آدھا سچ ہی پیش کررہی ہے۔ وہاں جو کچھ ہو رہا ہے ، اس کےکئی فریق ہیں، اتنی ہی سطحیں ہیں۔ ایک فریق بلوچ قوم پرست ہیں، ایک فریق بلوچ مزاحمت کار ہیں، انہیں الگ الگ دیکھنا چاہیے، پھر مزاحمت کاروں کے تین چار بڑے گروپ یعنی مری برادران کی بی ایل اے، براہمداغ بگٹی کی بی آراے، بی ایس او کے سابق صدر ڈاکٹر اللہ نذر کی بی ایل ایف اور سردار عطا للہ مینگل کے صاحبزادے جاوید مینگل کا لشکر بلوچستان ہے۔
    _______________________
    امریکہ کی مذمت کی بجائے بلوچستان میں ظلم بند کریں !
    _______________________
    ان سب کی جدوجہد اگرچہ آزاد بلوچستان کے لئے ہے ، مگر ظاہر ہے طریقہ کار میں فرق ہے، سپانسر بھی مختلف ہیں اور آپس میں لڑائیاں بھی ۔ مجھے کبھی یہ خطرہ محسوس نہیں ہوا کہ بلوچستان مشرقی پاکستان بن سکے گا، اس کی کئی وجوہات ہیں، سب سے اہم کہ جس تحریک میں اتنی فراست ہی نہ ہو کہ اپنے صوبے کی اہم ترین ابادی کو ساتھ ملا لے، وہ کیسے کامیاب ہوسکتی ہے؟ جو تحریک اخلاقی برتری سے محروم ہوجائے ، اسے تاریخی طور پر تو ہمیشہ ناکامی ہی دیکھنی پڑی ہے، پھر تیسرا اہم فیکٹر جغرافیائی مشکلات ہیں، ان کی آزادی کسی بھی ریجنل ملک کو وارے نہیں کھاتی ۔
    بلوچستان کا ایک بہت اہم فریق پشتون ہیں۔ ہم ہمیشہ یہ بات رواروی میں کہہ دیتے ہیں کہ پورے بلوچستان میں کہیں پر قومی جھنڈا نہیں لہرایا جا سکتا یا پورا بلوچستان جل رہا ہے۔ پوری ذمہ داری سے یہ بات لکھ رہا ہوں کہ پشتون ایک فیصد بھی بلوچ مسلح جدوجہد یا بلوچ قوم پرست تحریک کے ساتھ نہیں۔ بلکہ درست لفظوں میں خود بلوچ مزاحمت کاروں نے بھی پشتونوں کو ساتھ ملانے کی کوشش نہیں کی۔ عدم اعتماد اس قدر زیادہ ہے کہ پشتونوں کے سب سے بڑے قبیلے جوگیزئی کے ایک ممتاز سردار سے میں نے پوچھا کہ آپ لوگ بلوچوں کا ساتھ کیوں نہیں دے رہے، انہوں نے برجستہ جواب دیا، کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ سیٹلرز کے بعد اگلا نشانہ ہم ہی ہوں گے۔ کاکڑ سے لے کر تمام اہم پشتون قبیلے بلوچ تحریک سے یکسر لاتعلق ہیں۔
    ویسے جب پشتونوں کی بات کریں گے تو ہم پشتون قوم پرست میپ کے ساتھ ساتھ مولوی صاحبان کا بھی ذکر لازمآ کریں گے، جن کی اپنی اہم پاور پاکٹس ہیں، اب تو خیر جے یوآئی نظریاتی بھی تشکیل پا چکی ہے۔ مولوی صاحبان کو اپنے کردار کی بنا پر تنقید کا نشان بنایا جاتا ہے ، مگر بلوچستان میں ان کا کردار بڑا اہم ہے کہ وہ ہمیشہ وفاقی سیاست کرتے ہیں۔ایک فریق بلوچ روایتی سردار بھی ہیں۔ خان آف قلات تو خیر باہر ہیں اور آزاد بلوچستان کا نعرہ لگاتے پھر رہے ہیں، مگر قبائلی اعتبار سے یعنی پرانی ترتیب کے مطابق جام آف لسبیلہ دوسرے نمبر پر آتے ہیں، پھر چیف آف جھالاوان اور چیف آف ساروان ہیں۔ جام لسبیلہ تو جام یوسف ہیں، ان کا نقطہ نظر سب کو معلوم ہی ہے، لسبیلہ ویسے بھی مزاحمتی فالٹ لائن سے قدرے ہٹ کر ہے۔ چیف آف جھالاوان ثنا اللہ زہری ہیں جو مسلم لیگ ن میں شامل ہیں، چیف آف ساراوان نواب رئیسانی ہیں جو وزیراعلیٰ ہیں۔ ان کے علاوی تین اہم سرداروں میں خیر بخش مری، بگٹی سردار اور مینگل شامل ہیں۔ سردار خیر بخش کا تو سب کااندازہ ہے ہی، بگٹی سرداری عجیب مخمصے میں پڑی ہوئی ہے، مینگل سردار عطااللہ نے البتہ میان نواز شریف سےملاقات کے بعد بی بی سی کو جو انٹرویو دیا ،وہ بڑا حوصلہ افزا تھا۔
    اس پہلو سے کسی نے لکھا یا کہا نہیں مگر مجھے سردار مینگل کے اس موقف کے ساتھ کچھ نہ کچھ تعلق ان کے سیاسی مخلاف سابق وفاقی وزیر نصیر مینگل کے نوجوان صاحبزادے شفیق مینگل کے گھر پر کچھ ہی عرسہ قبل ہونے والا حملہ ہے ، جس میں کئی افراد ہلاک ہوئے ،مگر شفیق بچ نکلے۔ خیال یہ ظاہر کیا جا سکتا ہے کہ شفیق مینگل جو مقتدر حلقوں سے خاصے قریب ہیں، جوابی طور پر لشکر بلوچستان پر بہت زیادہ دبائو ڈال سکتے تھے، جو کہ سردار عطا اللہ مینگل کے تازہ ترین انٹرویو کے بعد تقریبآ ناممکن ہو چکا ہے۔
    ایک فریق وہ سردار یا وڈیرے بھی ہیں جو مری، بگٹی اور دیگر قبائل سے تعلق رکھتے ہیں اور اسٹیبلشمنٹ یا ریاست کا ساتھ دے رہے ہیں۔ یہ دلچسپ حقیقت بھی آپ لوگوں کے علم میں ہوگی کہ مری اور بگتی دونوں سردار اپنے قبیلے کی ذیلی اقلیتی شاخوں سے تعلق رکھتے ہیں اور بڑی شاخوں کے سردار اب ان کے مخالف ہوچکے ہیں۔ مری قبیلے کی سب سے بڑی شاخ بجارانی نواب خیر بخش کی نہ صرف مخالف ہو چکی ہے بلکہ ان کے مابین ایک دوسرے کے لوگ قتل کرنے کے الزام بھی لگ چکے ہیں، اپنے مخالفوں کو قتل کرنے کے الزام میں بوڑھے خیربخش مری کو چند ماہ تک قید بھی رہنا پڑا۔ دوسری طرف نواب بگٹی رائجہ بگٹی تھے ،مگر کلپر اور مسوری بگٹی دونوں بڑی شاخین اس وقت براہمداغ کے مخالف ہیں۔ کلپروں کے ساتھ تو خود نواب بگٹی نے بہت کچھ کر لیا تھا، مسوریوں کے ساتھ اب براہمداغ کی شدید دشمنی ہے ۔
    اس وقت مسوریوں کا سردار میر دائود ہی سوئی میں بیٹھا ہے ، اس سے پہلے وہاں عالی بگتی کو سرکار والے لے گئے تھے ، مگر عالی اس وقت غالبآ کراچی میں ہیں۔ دوسری طرف کوہلو میں بجارانی مریوں کا کنٹرول ہے ۔ یہ سردار جو اسٹیبلشمنٹ کا ساتھ دے رہے ہیں، یہ بھی اس تنازع کا ایک فریق ہیں ۔ انہیں یہ شکوہ ہے کہ ریاست ان کو ا ستعمال کرتی ہے، وہ اپنے بچے مرواتے ہیں، مخالفتیں مول لیتے ہیں ،مگر پھر مذاکرات کے بعد ان کے دشمن سرداروں کو تمام تر اختیارات دے کر دوبارہ پہلی جیسی جگہ دے دی جاتی ہے۔ بعض ایسے قبائل بھی ہیں جو کچھ عرصہ قبل مزاحمت کاروں کے ساتھ تھے ، مگر اب مختلف وجوہات کی بنا پر وہ فورسز کا ساتھ دے رہے ہیں۔ ان میں لانگو قبیلہ بھی شامل ہے، یادر ہے کہ رازق بگٹی کا قتل ایک لانگو جنگجو -ہی نے کیا تھا۔
    اب آ جائیں اہم ترین فریق ،یعنی ریاست کی جانب ، ویسے تو صوبائی حکومت بھی اس کا حصہ ہے ، مگر موجودہ حکومت تو خیر حکومت کہلوانے کی مستحق نہیں، تاہم ماضی میں بھی اصل فیصلے اسٹیبلشنٹ ہی کرتی رہی ہے ریاست کی جانب سے ۔ اسٹیبلشمنٹ کا سب سے افسوسناک اور قابل مذمت کردار مسنگ پرسن کا ہے۔ اس رویے کی کسی بھی صورت مین جواز نہیں ڈھونڈا جا سکتا۔ قانون پر ہر حال میں عمل ہونا چاہیے۔ ماورائے عدالت قتل کی کسی صورت جگہ نہیں ہونی چاہیے۔ اسٹیبلشمنٹ کو اپنا رویہ بدلنا ہوگا۔ عدالتیں اس حوالے سے شائد کچھ کر سکیں ۔ ایف سی کے رویے پر بھی تنقید ہوتی ہے۔ آئی ایس آئی کا بھی ایک خاص کردار ہے۔ اگرچہ قانون نافذ کرنے والے ادارے یہ کہتے ہیں کہ ہمیں فری ہینڈ نہیں دیا جاتا ، کبھی مذاکرات کی بات ہوتی ہے ، تو کبھی آپریشن کی، کبھی دہشت گردوں یا انتہا پسندوں کوختم کرنے کے لئے دبائو ڈالا جاتا ہے تو کبھی ان پر ہاتھ ہولا رکھنے کا کہا جاتا ہے۔ یوں کچھ بھی نہیں ہو رہا اور بدنامی ہی حصہ بن رہی ہے۔
    ایک فریق سیٹلرز بھی ہیں۔ سب سے مظلوم اور کیڑے مکوڑوں سے بھی زیادہ غیر اہم مخلوق۔ بارہ سو افراد پچھلے چار برسوں میں قتل ہوچکے ہیں۔ ان میں نائی، دھوبی، مزدوروں سے لے کر ٹیچر ،ڈاکٹر تک سب شامل ہیں۔ کسی کو توفیق نہیں ہوئی کہ ان بے گناہ مرنے والوں کی ہی مذمت کر دے۔ ایک بھی بلوچ قوم پرست سردار کو ایسا کرنے کی اخلاقی جرات نہیں ہوئی نہ ہی نام نہاد ہیومن رائٹس این جی اوز نے ان کے لئے آوازاٹھائی۔ ان میں سے بہت سے ایسے بھی تھے جو بیس پچیس تیس برسوں سے وہاں رہ رہے تھے ، کئی تو نصف صدی سے بھی زائد مگر اچانک ہی سب سیٹلرز قرار پائے۔ ان میں وہ سرائیکی بلوچ بھی شامل تھے جو ڈی جی خان ،راجن پور سے محنت مزدوری کرنے بلوچستان گئے تھے۔ ان میں وہ خاتون پروفیسر ناظمہ طالب بھی شامل ہیں جو کراچی سے بلوچستان پڑھانے کے لے آئی تھئں۔ان سب کے قتل عام کو کوئی جواز موجود نہیں تھا۔ مگر یہ سب مار دیے گئے ، ان کے حوالے سے ایک تضاد یہ بھی ہے کہ ان کی لاشوں کو کبھی کسی نے مسخ لاش نہیں لکھا۔ لاش تو ہر ایک کی چند گھنٹوں بعد مسخ ہو جاتی ہے ،مگر یہ پہلی بار بلوچستان میں دیکھا گیا کہ کسی سرائیکی ، پنجابی یا اردو بولنےو الے سیٹلر کی لاش کسی ویرانے سے ملتی ہے ،مگر اسے مسخ کوئی نہیں کہتا، بلوچ مزاحمت کاروں کی لاشیں البتہ ظاہر ہے مسخ ہی قرار پاتی ہیں۔ ہمارے نزدیک تو دونوں ہی مظلوم اور بے کس ہیں، مگر مذمت کرنے والوں کو دونوں کی کرنی چاہیے۔ یک طرفہ مذمت دیانتداری نہیں ۔
    سب سے اہم فریق بلوچ عوام ہیں، جنہیں کبھی کچھ نہیں ملا۔ سرداروں نے بھی زیادتی کی، اسٹیبلشمنٹ نے بھی ، سیاستدانوں نے بھی اور ڈکٹیٹروں نے بھی۔ ریاست کے لئے عوام اولاد کی مانند ہوتے ہیں، بلوچ ایسی اولاد ہے ،جس کے ناز نخرے اٹھائے گئے نہ ہی ان کے ساتھ حسن سلوک سے پیش آیا گیا۔ ان میں تلخی فطری طور پر نمودار ہوئی۔ ان کے اپنے دانشوروں، ادیبوں اور صحافیوں نے زیادہ بڑی زیادتی کی کہ بلوچ قوم کی فکری تربیت ہی نہیں کی، انہیں عمل پر نہین اکسایا، پسماندہ قوموں کی جو خامیاں ہوتی ہین ،جو ہم سرائکیوں مین بھی بدرجہ اتم موجود ہیں، جنہیں دور کرنے کے لئے باقاعدہ تحریک چلانی پڑتی ہے، بلوچ دانشوروں نے ایسا نہیں کیا۔
    ان تمام فیکٹرز کی بنا پر میں یہ کہتا ہوں کہ بلوچستان کے مسئلے کا حل چند فقروں میں پیش کرنا ممکن نہیں۔حل ضرور نکالنا چاہیے ، مگر کیسے ؟ عشروں کی بداعتمادی کو انتا جلد دور نہیں کیا جا سکتا۔ ان مسلح گروپوں سے کیسے مذاکرات ہو سکتے ہیں جو اس کے لئے تیار ہی نہیں ،جو بھارتی یا دیگر قوتوں کے پے رول پر ہیں یاوہاں سے فنڈنگ لیتے ہیں۔ ان سے کیسے مذاکرات کامیاب ہو سکتے ہیں؟ البتہ شدت پسندوں کو علیحدہ کیا جا سکتا ہے ، عوام تک ترقی کے ثمرات پہنچا کر ۔ جہاں تک نیا سوشل کنٹریکٹ کا تعلق ہے ، یہ خاکسار ہمیشہ اس کا حامی رہا ہے مگر صرف بلوچوں کے لئے ہی نہیں بلکہ پورے پاکستانی عوام کے لئے۔ البتہ نئے معاہدہ عمرانی سے کیا مراد ہے، اس کی وضاحت بھی آنی چاہیے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ یہ ایسی اصطلاح ہے جس کی ہر ایک اپنے انداز میں تعبیر وتشریح لے سکتا ہے ۔

    http://www.topstoryonline.com/amir-khakwani-rejoinder-on-balochistan

  19. edcoym says:

    @ukpaki1:

    Well said by you, “yeh kuch brown ungraz log (sardars, wadairas and chowdaries families, they should have been finished like india did in 1947, you know who they werem they betrayed their qom and got these properties in reward for gaddari, and today still they are doing same jobs and get support from them) Pakistan kay bad khuwa hein”. In 1999 I met a pious person ( he was from amratsar india, he died in 2007 in Vancouver, )I have tested him in his other perdictions. He said that Beh khuda “Pakistan ko kuch nahi hoga, haan uss kay dushman bahot ho’n gay, which you can see today above and around us (geopolitically), This person’s perdiction of 1999 came 100% true.

  20. pkpolitician says:

    بلوچ عوام کے قتل میں دہشت گرد گروپس بھی ملوث۔ پاک فوج ناراض علیحدگی پسند بلوچ بھائیوں سے مذاکرات کی حامی۔ غدار حکومت دلچسپی نہیں لے رہی۔

    بلوچ علیحدگی پسندوں کی ایک درجن سے زائد ویب سائٹس کام کر رہی ہیں۔ بلوچ سماچار نامی سوشل ویب سائٹ کو پاکستان اور پاکستانی فوج کے خلاف پراپیگنڈہ کرنے کے لئے استعمال کیا جارہا ہے۔

    http://ummat.com.pk/2012/02/19/news.php?p=story1.gif

  21. tahir mahmood says:

    Baluchistan issue is not an issue. We should first make sure that we decide about NRO first because it is more important to remove Zardari (being a Sindhi) and then we should decide about Memogate since we can have Zardari invloved in it. Memo eik haqqeqat hai as per Sipah Saalaar of Pakistan. CJ has really prioritize what issue should be addressed first. Can Gen Kyani explain is Baluchistan an issue or not? These general will ensure that Pakistan is broken in pieces but they would not transfer the power to civilian elected leadership.

  22. deevav says:

    @
    tahirmahmood

    What a comment? Zardari should be allowed to play havoc with Pak because he is a Sindhi? You can never rise and become a Pakistani.

    Do you have a share in zardari’s Surray Palace and his 60 Million Dollers account is Swiss Bank?

    And while criticizing military do not forget NRO was a deal between Mushy and BB.

    Don’t try to hide behind Provicialism to avoid corruption. All the drama of Sindhi topi day etc is playing the sind card, an old weapon of PPP.

    Has ever Punjab celebrated Dhoti day or KPK a Pagri day? Why not?

    Becasue they do not want to ever use a provincial card.

  23. tahir mahmood says:

    No Zardari should be hanged first before we look into other things. Baluchistan is not that important for us. We should reach to the fact first that who wrote this memo and upon whose orders it is very very important to find that out. If zardari is not trapped in that we still have NRO to hang him. We can look into Baluchistan issue later since it is not very important. the actual problem of Pakistan is 4 million dollars in swiss accounts.

  24. pkpolitician says:

    @yaqub

    Mubbarak ho, apke naukari pakke ho gaye.

    =======================================

    بھائی جی کہاں میری نوکری پکی کر وارہے ہیں۔ میں نے تو نوکری حاصل کرنے کے لئے کہیں اپلائی ہی نہیں کیا؟ برائے مہربانی وضاحت فرمائیں کیا کہنا چاہ رہے ہیں۔

Leave a Reply