July 17, 2013
Thai Airways

by mbokhari

Leaked  column of a journalist on trip to China with Prime Minister.

Warning: Only for readers with strong sense of humor. Must read the censored version of column before reading further to understand the context.

This is a fictional column.

۔۔۔۔۔ ہو تو چین کو چلیے۔

زندگی واقعی عجیب و غریب واقعات اورحادثات کا نام ہے۔

وزیر اعظم میاں نواز شریف کا پہلا دورہ چین تھا اور میں شاید اسلام آباد میں آخری صحافی ہوں گا جس کو وہ ساتھ لے جاتے۔ ان سے آخری ملاقات تقریباً چھہ سال قبل اس جہاز میں ہوئی تھی جس میں وہ پاکستان لوٹ رہے تھے۔ لیہ سے تعلق رکھنے والے ایک پسماندہ صحافی کے لیے وہ فلائیٹ ایک خوبصورت خواب تھی۔ قومی ائیرلائن کی مہکتی ہوئی صاف ستھری ہوائی میزبانوں نے اپنی مہمان نوازی سے دل موہ لیا تھا اور تمام سفر میاں صاحب کو سیاسی، مزہبی اور اقتصادی امور پر بریفنگ دیتے ہوئے تتلیوں کی ہنسی اور چہکار کانوں میں رس گھولتی رہی تھی۔ اﷲ اﷲ، کیا دن تھا جب میں جن تھا، وزن بھی کم تھا، اب دیو ہوں، جنوں کا پیو ہوں لہزا چین کے دورے پر میاں صاحب نے جہاز میں بٹھانے سے صاف انکار کر دیا۔

یوں پچھلے پانچ سال بعد، چند دنوں میں میرے ساتھ جو کچھ ہوا اس نے مجھے میاں صاحب کی سیاسی اور سفری پالیسوں کا ناقد بنا دیا۔ وہ مشترکہ دوست، جو لندن میں ڈیوک سٹریٹ میں ان کے دفتر میں ہمارے آنے جانے سے واقف تھے، حیران ہوتے ہیں کہ آپ ایک دم میاں صاحب کے خلاف کیوں ہو گئے۔ آخر کیوں؟ ۔ کیا جواب دوں؟ کیا کہوں؟ جو کچھ کہنا ہے اس کالم کے ذریعے کہہ رہا ہوں۔ بقول علامہ اقبال ، شاید کے تیرے سر میں اتر جائے میری بات، اورکاش اس پر میاں صاحب کہیں، میں نے بھی یہ جانا کہ گویا یہ بھی میرے دل میں ہے۔ اور پھر میں کہوں، مہرباں ہو کے بلا لو مجھے چاہو جس وقت، میں گیا کریڈٹ نہیں ہوں کہ پھرآ بھی نہ سکوں۔ معزز ناظرین کو اندازہ ہو ہی گیا ہو گا کہ مجے شعر و شاعری ، فلسفہ، ادب، اور سب سے بڑھ کر ڈرامہ کتنا پسند ہے۔ آمین ثم آمین
دنیا گروپ کی انتظامیہ کی طرف سے کہا گیا کہ میں چین جاؤں، خرچہ دفتر برداشت کرے گا۔ ہمارے دوست محمد مالک نے جانا تھا لیکن دفتر کی الماری سے ان کا پاسپورٹ چرا لیا گیا۔ خدا جانے کس گھٹیا شخص نے چوری کیا ، واﷲعالم ۔ خیر میں نے مجبوراً اپنا نام آگے پیش کیا۔ چند لوگوں کو ٹیلیفون کیے ،انکا رانجھا راضی کیا، اور چین کا پروگرام پکا ہو گیا۔ چینی محاورے اور چینی زبان میں شریر قسم کے لطیفے بھی رٹ لیے۔

ویزہ لینے کے لیے پاسپورٹ جمع کرایا۔ دفتر نے ڈیڑہ لاکھ نقد دیا کہ ٹکٹ خرید لوں۔ پرانی انارکلی میں ایک جاننے والے کے ذریعے لیکن سوا لاکھ کی ٹکٹ مل گئی۔ یوں پچیس ہزار، لیہ میں میرے جاننے والے ایک یتیم مسکین صحافی کے لیے بچ رہے۔ اﷲ تعالیٰ کیا کیا اسباب پیدا کرتا ہے، حیرت ہوتی ہے۔ خیر ٹکٹ غور سے دیکھی۔ لاہور سے بنکاک اور پھر بیجنگ پہنچنا تھا۔ پانچ گھنٹے بنکاک میں انتظار بنتا تھا ۔ سوچا کچھ بنکاک دیکھ لیا جائے، یار لوگوں سے بڑی عجیب وغریب اور دل گدگدا دینے والی باتیں سن رکھی تھیں ، پھر کئی دن انٹرنیٹ پر گہری قسم کی ریسرچ بھی کی تھی۔ خیال آیا کیوں نہ انوسٹی گیٹو رپورٹنگ ہو جائے۔ اب بیٹھ کر اپنے ارمانوں کے بارے میں سوچتا ہوں تو رونا آتا ہے، کیا کیا سوچ کر گیا تھا۔

اگلے دن چینی ایمبیسی سے خاتون کا فون آیا۔ کھنکتی ہوئی خوبصورت آواز۔ مسٹر کڑاسالا۔۔۔ ایک دھچکہ سا لگا۔ پھر یاد آیا کہ چین، جاپان اور تھائی لینڈ کے لوگ ل، ر اور ڑ کی آوازوں میں گڑ بڑ کرتے رہتے ہیں۔ میں نے کہا، جی فرمایے ﴿ مکمل شستہ انگریزی میں﴾۔ خاتون نے کہا، مسٹر کڑا سالا، آپکے پراٹھوں کے متعلق ہمیں کچھ معلومات ملی ہیں ۔

اب آپ سے کیا پردہ ۔۔ گڑبڑا گیا ۔ کچھ صفائی دینے کی کوشش کی کہ اتنا بھی پینڈو نہیں، ناشتے میں پراٹھوں کے علاوہ کارن فلیکس، ٹوسٹ، جیم، وافلز، موسلی، ایگز﴿انڈے﴾، جوس، پینٹ بٹر ﴿مونگ پھلی کا مربہ﴾ اور کافی بھی لیتا ہوں ، باقی جیسا ناشتے آپ کروائیں گے، کر لیں گے۔ ہماری کیا مجال ہے، ہیں جی؟ خاتون بولی نہیں نہیں، یہ انٹرنیٹ پرآپکے پراٹھوں میں کچھ فولاد پکڑا گیا تھا، اس کے متعلق آپ کیا کہیں گے؟

کچھ سر کھجایا۔۔ پھر جیسے دماغ میں ایک جھماکہ سا ہوا۔

پراٹھوں میں کچھ فولاد ۔۔۔
پلاٹوں میں کچھ فراڈ
کچھ ۔ کچھ،۔۔فراڈ۔۔فراڈ۔۔پلاٹوں، پلاٹوں۔۔۔ اسکی آواز جیسے کسی گہری کھائی سے آ رہی تھی۔

ہڑبڑا کر تیز تیز بولنا شروع کیا۔ سازش، صحافتی آزادی، سازش، بے قصور، سرائیکی، ضمیر کی آواز، میرٹ پر پلاٹ، پلاٹوں میں برکت، چھوٹے چھوٹے بچے۔۔۔
جانے کیا کیا کہتا رہا۔، کیا کیا بکتا رہا جنوں میں، کچھ نہ سمجھے خدا کرے کوئی۔ ۔ جب ہوش آیا تو فون سے ٹوں ٹوں کی آواز آ رہی تھی۔

اب انتظار کی گھڑیاں اورسوٹے پر سوٹا۔ کچھ دعائیں وغیرہ کیں اور ایک بوتل روح افزا پی کر سو گیا۔ خدا کا کرنا دیکھئے، اگلے دن ویزہ آ گیا۔ اور اسی شام لاہور سے بنکاک کی فلائیٹ پکڑ لی۔
کیا فلائیٹ تھی۔ منحنی سی دھان پان فضائی میزبان، ہر لحظہ چاک و چوبند اور خوش مزاج۔ خوش مستیوں کی تمام کوششوں کو انہوں نے خندہ پیشانی سے برداشت کیا اور تشدد سے ہر ممکن گریز کیا ۔ بچپن کا لیہ یاد آ گیا اور میں بہت دیر سوچتا رہا کہ وقت مجہے کہاں سے کہاں لے آیا ہے۔ کہاں وہ لیہ کہ نہر اور منجھ کی دم پکڑ کر نہرعبور کرتا دھوتی پہنے ایک ہینڈ سم صحافی اور کہاں یہ تھائی فضائی میزبان اور انکی زبان سے ، مسٹر کڑا سالا، مسٹر کڑا سالا، پلیز بی ہیو یورسیلف، کی تکرار۔ محنت کا پھل میٹھا ہوتا اور جلنے والے کا منہ کالا۔

بنکاک ایرپورٹ پر سینکڑوں لوگ گزر رہے تھے۔ ابھی ہم لائن میں ہی کھڑے اپنی باری کا انتظار کر رہے تھے کہ ایک مکروہ صورت والے پھینے تھائی انسپکٹر نے گندا اشارہ کر کہ مجھے اور ایک اور پاکستانی صحافی بھٹی صاحب کو اپنے پاس بلا لیا۔ ہم گڑبڑاگیے۔ چھاپ تلک سب چھینی رے، پھینے ، نیناں ملائکے۔ ہمارا قصور کیا تھا؟ کیا اس لیے کہ ہم شکل سے پاکستانی لگتے تھے؟
دل مسوس کر رہ گیے۔ کیا کرتے۔ کڑی اور نہایت قابل اعتراض جامہ تلاشی سے گزرنے کے بعد میں اور بھٹی صاحب ایک دوسرے سے آنکھیں ملانے کے قابل نہیں رہے تھے۔ لیکن چلو شکر ہے جان خلاصی ہوئی۔ اگلا سٹاپ چین۔ چلتے ہو تو چین کو چلیے۔ خوشی خوشی لنگڑاتے ہوے ڈپارچر لاؤنج کی طرف بڑھے ہی تھے کہ تھائی زبان میں صور اسرافیل سنائی دی۔ انسپکٹرکڑک دار آواز میں پکاررہا تھا ۔ سینے پرلگے بیج پرنام لکھا تھا انسپکٹر چھترکھا لنگھجا ۔۔

Chatturkha Langjha

میرا پاسپورٹ مشین سے گزارا گیا۔

میسٹر کالا سڑا، پلیز یو کم دس وے۔

پہلے کڑا سالا اور اب کالا سڑا؟ تلملانے کے سوا کیا کر سکتا تھا۔ صحافت قلم کی مزدوری ہے اور اس دور پرآشوب میں تلخ ہیں بہت بندہ مزدور کے حالات۔ جامہ تلاشی کا خمار ابھی ٹوٹا نہیں تھا ۔ بھٹی صاحب نے میری طرف دیکھا اور اس مرد شجاع نے میری آنکھوں میں لکھا ہوا سسکیوں بھرا انکار پڑھ لیا ۔۔۔ پنہاں تھا دام سخت قریب آشیاں کے، اڑنے نہ پائے تھے کہ گرفتار ہم ہوئے ۔ چار و ناچار، بلکہ پانچ و ناپانچ، انسپکڑ چھترکھا لنگھجا کی طرف بوجھل قدموں سے لنگڑاتے ہوے مڑا تو میرے دل میں صرف ایک سوال تھا۔ اگر آج میاں نواز شریف ہمیں ماضی کی طرح سرکاری خرچے اور جہاز پر سفر کراتے تو کونسی قیامت آ جانی تھی؟ ہمیں اس طرح ذلیل کیوں کیا جا رہا ہے؟ اینکران قوم اور سپوتان لیہ کی اس قدر تزلیل آخر کیوں؟ کیا صرف اس لیے کہ میں نے میاں نواز شریف کی دوغلی پالیسیوں کو تنقید کا نشانہ بنانے کی جرات کی ہے؟ کیا اپنے ضمیر کی آواز پر لبیک کہنے کی سزا ہے کہ انسپکٹر چھترکھا لنگجھا کالا سڑا کہہ کر مجھے قابل دست اندازیء پولیس بناتا رہے؟ کیا قوم کی عزت غیر ملکی ہوائی اڈوں پریوں سستے داموں نیلام۔۔۔۔

ابھی رنج و غم سے بوجھل خیالات کا خچربگٹٹ دوڑنے کے لیے بوٹ ہی پہن رہا تھا کہ سیکورٹی والی جگہ آ گئی۔

آگے جو کچھ ہوا وہ ایک خاندانی اخبار میں لکھنے کے لایق نہ ہے ۔ قصہ مختصر، عشق کے امتحاں ابھی اور بھی تھے۔اندھیرے کمرے میں ایک شرمناک مشین جو کہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی وغیرہ کر دیتی ہے، سے گزارا گیا۔ بڑا بے آبرو ہو کہ تیری مشینوں سے باہر نکلا ہی تھا تو انسپکٹر چھترکھا لنگھجا نے معنی خیز مسکراہٹ سے دونوں ہاتھ میرے کندھوں پر رکھ کرمیرا رخ اپنی طرف کر دیا ۔ کچھ وعدوں وعیدوں ، لعنت ملامت، ہاتھ جوڑنے اور ایشیائی بھائی چارے کے واسطے دینے سے کچھ نہ بنا۔ کچھ دینے اور لینے کے بعد ۔۔۔ بہت کچھ دینے اور، بہت کچھ لینے کے بعد فراغت ہوی ۔ ہمارے گاؤں میں ایک لڑکی ڈاکٹر کے پاس گئی اور کہنے لگی ” ڈاکٹر صاحب ، میری رنگت تو بہت اچھی ھے لیکن میرا فیس کچھ زیادہ ھی ملائم ، چکنا اور حساس ھے ، میں رات کو کیا لگا کر سویا کروں؟ “ڈاکٹر نے بڑے اطمینان سے جواب دیا ” آپ رات کو کنڈی لگا کر سویا کریں ۔۔۔ لیکن صحافی ائیرپورٹ پر کنڈی لگا کر کیسے سوئیں؟۔ ۔۔۔ میاں نواز شریف سرکاری جہاز میں چین لے جاتے تو یہ سب نہ ہوتا۔

بہر حال، میں اس موضوع پر رپورٹر بھٹی صاحب کی تمام من گھڑت کہانیوں ، دلخراش لطیفوں اور موبایل پر بنائی واہیات ویڈیو کی سختی سے تردید کرتا ہوں۔ جھوٹ کے پاؤں نہیں ہوتے اور زیادہ جھوٹ بولنے والوں کی ٹانگیں فریکچر وغیرہ ہوتی رہتی ہیں ۔

خیربنکاک ائرپورٹ کے ڈپارچر لؤنج پر ابھی پانچ گھنٹے گزارنا تھے۔ تھکاوٹ سے برا حال اور ریسٹ کرنے کی شدید طلب۔ ایک ہال کے آخر میں دروازہ نظر آیا۔ بڑا بڑا لکھا تھا ریسٹ روم۔ بہت خوش ہوا کہ ریسٹ کا موقع مل گیا۔ کمرہ البتہ چھوٹا سا تھا لیکن تھا بہت صاف ستھرہ۔ خوبصورت دیدہ زیب ٹائلیں چھت تک لگی ہوئی تھیں اور مزے کی بات؟ پینے کے پانی کا بڑا سا چینی کا گھڑا فرش پررکھا تھا۔ لیکن شاید چوری کے ڈر سے خوب باندہ کر رکھا ہوا تھا۔ اتنا امیر ملک لیکن پھر بھی چوری چکاری کا خطرہ ؟ حیرت ہوتی ہے انسان کے حرص و طمع پر۔ میں نے بھی کافی زور لگایا، ٹھڈے شڈے مارے، لیکن گھڑا ہلا نہیں۔ خیر انسان کوجو کچھ مل جائے اس پر قناعت کرنی چاہیے، جیسا قبلہ ہارون رشید کبھی کبھی سر جھکائے بیٹھے رہتے ہیں اور یکلخت جھٹکے سے سر اٹھا کر فرماتے ہیں ، پلاٹ ملے تو لے لو اورنہ ملے تو صبر کرو اور کوشش جاری رکھو، آخر تم کامیاب اور پلاٹ یاب ہو گے ۔ بے شک بے شک۔

بنکاک سے جہاز چلا اور بیس گھنٹے بعد چین کے شہر پہنچا۔ کیا بھلا سا نام تھا۔ اوروموچی، آڑاماچا، ایرے میچے، ۔۔۔ ہاں، آرمچی۔ وہاں سے بیجنگ عربی گھوڑے پر صرف دس گھنٹے کے فاصلے پرہے جو کہ ہم نے بیس گھنٹے میں تبتی اونٹ سے کیا۔ ہوٹل پہنچا تو پتہ چلا کہ میں تو خوش قسمت تھا کہ چوبیس گھنٹوں کے بعد بیجنگ پہنچ گیا تھا۔ بہت سے دوست راستے میں بحری قزاقوں کے ہاتھوں مارے جا چکے تھے، کچھ کے سفینے ڈوب چکے تھے اور کچھ کو ملیریا، لیکوریا اور خسرہ جیسی موزی بیماریوں نے آ لیا اور کچھ ابھی راستے میں تیر رہے تھے۔ اگر میاں نواز شریف سرکاری جہاز میں لے جاتے تو یہ سب نہ ہوتا۔

چلیں درست ہے صحافی وزیراعظم کے جہاز میں سفر نہیں کر سکتے، تاہم اس وقت سب حیران رہ گیے جب پتہ چلا کہ یہ سلوک پاکستان کے سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی کے ساتھ بھی کیا گیا ہے۔ جب مجھے اس امر کا علم ہوا تو غصے سے میرے تن بدن میں آگ لگ گئی۔۔۔ٹھنڈے پسنے آنے لگے اور دماغ مزید ماؤف ہو گیا۔ میں نے اسی وقت فیصلہ کیا کہ صحافیوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیاں اپنی جگہ، میں خود کئی دفعہ ایسی زیادتیاں کر اور کروا چکا ہوں۔۔۔ لیکن پاکستان کے سیکرٹری خارجہ کے ساتھ یہ ظلم اور زیاستی ؟ آخر کیوں؟ اور کچھ نہیں تو فلائیٹ کے دوران جلیل صاحب اور میں مل کر وزیراعظم کو چین پرسیاسی، مزہبی، امور خانہ داری اورادبی معاملات پر بریفنگ ھی دے سکتے تھے ﴿ آپ کو ویسے میرے فنون لطیفہ و غیر لطیفہ خصوصاُ ڈرامہ سے دلچسپی کا اندازہ ہو گیا ہو گا﴾ ۔ پچھلے ہفتے ایک مشکوک ویب سائٹ پر کچھ ویڈیو کلپ دیکھے تھے۔ چینیوں کی خوبصورتی، مہارت، لچک اور چالاکیوں کے بارے میں۔ انہی سے آگاہ کر سکتے تھے۔ اب کیا خاک مزاکرات کیے ہوں گے چینیوں سے۔ اوپر سے جو مظلوم درازقد ہینڈسم صحافی چین پہنچ ہی گئے، وہ نیند اور تھکاوٹ سے ٹوٹے ہوئے تھے۔ کیا وہ اپنی نیندیں پوری کرتے، اندرونی چوٹوں کی ٹکوریں کرتے یا کوریج ؟ بیڑہ غرق کر دیا دورہ چین کا وزیراعظم نے۔

جو سلوک ہمارے ساتھ کیا گیا ہے، اس سے ایک محاورہ یاد آگیا جو میرے گاؤں کے بڑے مجھے پیار سے سنایا کرتے تھے۔پتر اینج نی ہوندا۔۔ تباکو پینا کوڑا ، تے کم کرنا ۔۔۔ تھوڑا۔ اس کا غیر پارلیمانی ورژن آپ مجھے سے ٹوٹر پر پوچھ سکتے ہیں۔ اسی طرح جب میاں نواز شریف کی صحافیوں سے چند لمحے کے لیے چلتے پھرتے ملاقات ہوئی تو کہنے لگے کل آپ کو بتائیں گے اور اچھی خبریں دیں گے۔ میں نے کہا میاں صاحب کوئی اچھی خبرآج بھی دے دیں۔ کہنے لگے، کیا مطلب، میں نے آنکھ ماری، اشارہ کیا، کوڑے تمباکو کا ذکر کیا۔۔ لیکن میاں صاحب انتہائی بے مروتی سے ہاتھ چھڑا کر آگے بڑھ گئے۔ قبلہ ہارون رشید سچ کہتے ہیں، شریف برادران نے ماضی سے کچھ نہیں سیکھا۔ اس سے تو گیلانی صاحب اچھے تھے۔ سرکاری وفد کے ساتھ سفر، سرکاری جہاز کے مزے اور سب سے بڑھ کر، گیلانی صاحب کی آنکھ میں بہت شرم تھی، بے حد مروت۔۔ ہر صحافی کے لیے اس کی قسمت کا لفافہ اس کی سیٹ پر پہلے سے رکھا ہوتا تھا۔ بال بچوں والوں کو اس طرح شرمندہ نہیں کیا جاتا تھا۔ اچھی پبلسٹی اس کے علاوہ ملتی تھی۔

ٹھیک ہے میاں صاحب ٹھیک ہے۔ اس پر ایک لطیفہ یاد آیا۔ ایک جنرل پریڈ کے معائنے کیلیے پہنچا تو سارے فوجی غائب تھے۔ تھوڑی دیر میں ایک فوجی حاضر ہوا اور بولا “میں اپنی ماں سے ملنے گیا اور واپسی پر میری بس مس ہو گئی، ٹیکسی بلائی تو وہ خراب ہو گئی، ٹانگے پر سوار ہوا تو اس کا گھوڑا مر گیا، میں نے پھر دوڑ لگائی اور تب یہاں پہنچا ہوں”۔ جنرل کو شک تو ہوا مگر اس نے سوچا چلو فوجی پہنچ تو گیا۔۔ اس کے بعد دس فوجی اکٹھے آئے اور انہوں نے بھی باری باری یہی کہانی سنائی۔ جنرل نے سوچا جب پہلے فوجی کو چھوڑ دیا ہے تو ان کو بھی چھوڑ دیتا ہوں۔
پھر ایک اور فوجی لیٹ آیا اور اس نے بھی وہی کہانی سنانی شروع کر دی کہ میں اپنی ماں سے ملنے گیا اور واپسی پر میری بس مس ہو گئی، ٹیکسی بلائی تو۔۔۔۔۔۔۔۔جنرل اسے ٹوکتے ہوئے بولا “مجھے پتہ ہے آگے کیا ہوا، تمہاری ٹیکسی خراب ہو گئی”۔فوجی بولا، نہیں جناب، ٹیکسی کے راستے میں اتنے زیادہ مرے ہوئے گھوڑے پڑے تھے کہ ڈرائیور کو انہیں ہٹا کر راستہ بنانے میں بہت زیادہ وقت لگ گیا”۔

اگر اس فوج کا جنرل ہماری فوج کے جرنیلوں کی طرح پلاٹ شلاٹ کے وعدے کرلیتا تو سارے فوجی عین ٹایم پر پہنچ جاتے۔ فوجی تو فوجی، خاص قسم کے صحافیوں کی قطاریں لگی ہوتیں۔ اور اس قطار میں سب سے آگے کونسا صحافی ہوتا؟

ایک دھوتی پہنے، تتلاتا ہینڈسم صحافی کتنا پالا گول مٹول لگ لا ہوتا، ہے نا؟

50 Comments

  1. ukpaki1 says:

    salam

    fictional article has been posted here but I am surprised to see that there is no article or news on this forum regarding india’s ex CBI officer who made a statement about mumbai attacks and said ”it was inside job”. indian establishment itself masterminded those attacks, although every sane person knew about it but it was an important development and why there is no news article on that? why did members of this forum not posted their views about that…
    right from day 1 it was very easy to figure out that those attacks were engineered….

    May ALLAH bless Pakistan and Pakistanis.

  2. Bawa says:

    و علیکم السلام بھائی جی

    بظاہر انڈین سی بی آئی کے سابقہ اہلکار کا بیان ناقابل یقین اور سی بی آئی کی اندرونی چپقلش کی نشاندھی کرتا ہے. اگر اس کے بیان میں ذرا سی بھی حقیقت ہوتی تو آئی ایس آئی میمو گیٹ سکینڈل کی طرح چیخ چیخ کر آسمان سر پر اٹھا لیتی. پھر انڈین سی بی آئی کے سابقہ اہلکار کے بیان پر بغیر کسی ثبوت کے کوئی یقین بھی کیسے کر سکتا ہے؟

    چونکہ ممبئی حملوں کے پاکستان میں موجود منصوبہ سازوں زکی الرحمن لکھوی، ضرار شاہ، ابو القمعہ، محمد امین صادق، شاہد جمیل رضوی، جمیل احمد اور یونس انجم وغیرہ سے آئی ایس آئی اور ایف آئی اے خود تفتیس کر چکی ہیں اور وہ سب حقائق جاتی ہیں اس لیے انہوں نے اس بیان کو کوئی اہمیت نہیں دی ہے. یہ بات تو اب ڈھکی چھپی نہیں ہے کہ اجمل قصاب پاکستانی شہری تھا اور اسکا تعلق لشکر طیبہ سے تھا

  3. Ahmed says:

    Yes Bawa Ji, Aap jasey tatoowoon ki kami nahin hai Pakistan Mein. Why dont you ask Indians from Mumbai they themself say that it was an inside job and they wanted to kill Kukurey… Now unfortunately aap jasey Indian American tattoo bohat hein hamaray paas. Ajmal Kasab must be ur neigbour right???

    God bless Pakistan

    • Bawa says:

      احمد جی

      میں نے تمہاری دم پر کب پاؤں رکھا ہے جو ک-تے کی طرح کاٹنے کو دوڑے ہو؟ اپنی اوقات میں رہ کر دوسروں سے بات کرتے ہیں

      تم ممی ڈیڈی وہی بولو گے جو جنرل پاشا نہیں تمہیں سکھایا ہے. اس ملک کا بیڑہ فوج اور آئی ایس آئی کی منافقت نے غرق کیا ہے. یہ حر ا می طالبان جو آج اس ملک کو خون میں نہلا رہے ہیں انہی کی پیداوار ہیں

      ممبئی حملے لشکر طیبہ کی کاروائی تھی اور یہ تمہارا جنرل پاشا خوب جانتا ہے

      جنرل پاشا وہی حر ا می ہے جو آج اعتراف کر رہا ہے کہ ڈرون حملوں کی اجازت اور اس کے لیے اڈے اسی کی مرضی سے دیے گئے تھے. کوئی پیپسی برگر اسکے خلاف بھونکنے کی جرات نہیں کرے گا

  4. Farooq1995 says:

    Zahid Hamid is talkative, illiterate and agency paid stupid. His father was course mate of Hamid Gul, did IT related diploma in 3rd Division. Never ever even seen shadow of a nursery related to defense and strategic studies. As fake and No 2 as Tariq Ismail Sagar, whose novels are known but nobody as seen him. Hamid Gul recruited him in ISI on request of his father against reservations of ISI under command officers. That he not having basic IQ or sense, will expose ISI soon. Hamid Gul stood with Zahid Hamid commitment, he was given two tasks : (1) Shout illogic on Civil Government if thinks to goes against establishment policy, as Musharraf can bow head to Indian leaders but civil leadership should not go for honorable hand shake. (2) Keep stressing on Hamid Gul policy of strategic depth in Afghanistan and Khawarjeen in the interest of Pakistan. Guess your self where we stand due to this Afghan policy. Now Pasha / Goldsmith are paying to MAlik Riaz hired Media Channels (DUNYA, SUCH, DIN, ARY) and few anchors of other channels with lavish payment from PTI Qadri Account, to malign existing PML Government. Suliman Taseer son Musbashir Lucman is on fore front. GEO symbol of Pakistani patriotism who stood violent against Musharraf emergency is key hurdle to Pasha Goldsmith designs, besides CJP. Otherwise, all plans are ready like Egypt, IK may be caretaker cum undertaker with Dharna like Zameer Frosh (Tehrir) Square of Egypt. Geo did not responded idiots on its channels, reflects maturity level. These millat frosh must be taken to task through courts. Lal Topi, is to disgrace Pak Army, as worn by Sind Regiment (his father probably was in it) and nonsense son could not clear single test for selection in Army. Well done GEO, Pakistani are proud of you. Keep doing grate job, keeping aside paid propaganda from PTI Qadri Account Canada.

    • Ahmad H. Kazi says:

      I don’t know from where Zaid Hamid has come in this article. All stupid things you have written. A well paid comments by you Mr. Farooq 1995.

  5. imtiazahmed says:

    It is hilarous column well written picking up the disclosure of Rauf Klasara, when instead of going in the same plane that took PM to Beijing, he had to go on his media (Dunya) enterprise directive which he disclosed in a talk show. He also disclosed that he didn’t get a direct ticket to Beijing and had to go via Dubai. The author picking up this incident decorated his hilarous article.

    Having said this, there is nothing wrong with the whole episode. Every government has their own policy which they are fully entitled to. And there is nothing out of extraordinary. Many security issues must have been involved which made it not possible for Rauf Klasara to board on the sme plane in which PM with his team was flying to Beijing.

    Nonetheless, it would not be fair not to praise this hilarous piece of writing.

  6. ukpaki1 says:

    السلام و علیکم باوا بھائی

    اس میں کوئی شک نہیں کہ ہماری خفیہ ایجنسیوں اور آئی ایس آئی نے بڑا ہی گند گھولا ہے ملک میں اور اپنے سیاسی کردار کی وجہ سے حکومتوں کو بھی نہیں چلنے دیا۔ آپ نے پاشا کا ذکر کیا تو پاشا کا کردار تو ریمنڈ ڈیوس کے معاملے میں بھی بہت ہی گھناؤنا تھا۔ بلکہ مشرف مردود کے زمانے میں تو فوجیوں نے تیر کے نشان والی گاڑیاں ہی استعمال کرنی چھوڑ دی تھیں کیونکہ اس نے فوج کی ساکھ ٹکے کی بھی نہیں چھوڑی تھی۔ یہ ساری باتیں اپنی جگہ ٹھیک۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔لیکن اس میں بھی کوئی شک نہیں کہ بھارت کی خفیہ ایجنسیاں خاص کر را ایک دہشتگرد تنظیم ہے۔ اور اس نے حکومت کے ساتھ مل کے اپنے ہی لوگوں کو قتل کروایا ہے۔ سمجھوتہ ایکسپریس کا واقعہ ہو، گجرات میں مسلم کش فسادات ہوں، پارلیمنٹ پہ حملہ وغیرہ یہ وہ واقعات ہیں جن میں بھارتی فوج، ایجنسیاں اور حکومتیں ملوث رہی ہیں۔ اور جو کشمیر میں بھارتی فوج، انٹیلی جنس اور حکومت کے مظالم ہیں اس کا تو حساب ہی نہیں۔
    بھارتی فوج کا نیٹ ورک پورے جنوبی ایشیا میں پھیلا ہوا ہے، یہ نیپال، مالدیپ وغیرہ سے بھی بندے اٹھاتے ھیں اور ان کو دہشتگردی کی کارروایئوں میں استعمال کرتے ھیں۔ سری لنکا میں تیس سال تامل ٹائیگرز کو بھارتی ہی چلاتے رہے ھیں۔ ممبئی حملوں کا بنیادی مقصد پاکستان کو دباؤ میں لانا اور جماعت الدعوہ پہ پابندی لگوانا تھا اور سمجھوتہ ایکسپریس جس میں بھارتی کرنل ملوث تھا وہاں سے توجہ ہٹانا تھا کیونکہ سمجھوتہ ایکسپریس میں اور بھی بھارتی فوجیوں کے نام آنے تھے اس لیے کرکرے کو ہی مروا دیا گیا جو ان حملوں کی تحقیقات میں بہت آگے تک پہنچ گیا تھا۔ اس کے علاوہ اور بھی بہت سی باتیں ہیں جن سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ وہ حملہ بھارت نے خود کروایا تھا۔ اس کے علاوہ جو ویڈیو فوٹیج جس میں اجمل قصاب ہاتھ میں گن لیے نظر آرہا ہے اور اس نے پیچھے بیگ بھی لٹکایا ہوا ہے اس میں جو اس نے کلائی میں بینڈ پہنا ہوا ہے وہ مخصوص بینڈ بھارت کے ہی علاقے میں پہنے جاتے ھیں وہ پاکستانی بینڈ نہیں ہے اور اس کے جو الفاظ سننے کو ملے تھے اور جو اس کا لہجہ اور زبان تھی وہ بالکل پاکستانی نہیں تھی۔
    میں سننا چاہوں گا اس بال ٹھاکرے کی نوکرانی جو عالمی حقوق کی علمبردار بنتی ہے جس کو عافیہ صدیقی جسی مظلوم خاتون نظر نہیں آتی ہاں لیکن شکیل آفریدی جیسے غدار کیلیے اس کے پیٹ میں مروڑ اٹھتے ھیں۔ وہ اس بارے میں کیا بکواس کرتی ہے، میں سننا چاہوں گا۔ جیو ٹی وی نے اس حوالے سے جو منحوس کردار ادا کیا اور یہ ثابت کرنے کی کوشش کی کہ پاکستان سے یہ حملے ہوئے اس سے پتہ لگتا ہے کہ بھارت کے کتنے بڑے پٹھو ہیں یہ، یہ تو اپنی خبروں تک میں بھارتی گانے چلاتے ھیں، بھارت کی بڑی سرمایہ کاری ہے جیو میں اور دوسرے چینلز میں۔
    پاکستان کی بزدل اور مردود حکومت اس وقت بالکل اپنا دفاع نہیں کرسکی اور اب بھی یہ نواز حکومت بھی اتنے بڑے بیان کے بعد خاموش ہے۔
    جتنا اس وقت اور پچھلی حکومت بھارت کے نیچے لگی ہوئی تھی اس کی مثال نہیں ملتی کیونکہ یہ سربجیت سنگھ جیسے مردود غدار کو پھانسی نہیں دے سکے بلکہ معافی دے دی اور پھر ایک غلط طریقے سے اس کا قتل کروایا جیل میں کیونکہ اتنی ہمت نہیں تھے کہ کھلے عام پھانسی دے سکیں، اور بھارتی حکومت اور عدالت کی بدمعاشی دیکھیں جنہوں نے افضل گرو کو ثبوت نہ ہوتے ہوئے بھی پھانسی دے دی، یہ ہے بھارت کا مکروہ اور لعنتی چہرہ۔

    • Bawa says:

      و علیکم السلام بھائی جی

      آپکی باتیں درست ہیں لیکن کسی ملک کی سیکیورٹی ایجنسی یا حکومت اپنے ہی ملک میں خون خرابہ کبھی نہیں کرتی ہے اور نہ ہی بے گناہ لوگوں کو قتل کرتی ہیں. ہاں البتہ، مذہبی جنونی ہر جگہ اور ہر ادارے اور ہر حکومت میں ہوتے ہیں جو انفرادی طور پر یا کسی مذہبی گروپ کے ساتھ ملکر اس طرح کا قدم اٹھا سکتے ہیں جس طرح سمجھوتہ ایکسپریس یا گجرات کے واقعیات میں ہوا ہے لیکن پارلیمنٹ پر حملہ یا ممبئی حملوں میں بھارتی سیکیورٹی ایجنسی یا حکومت ملوث نہیں ہو سکتی ہے. اگر اس حملے میں لشکر طیبہ ملوث نہ ہوتی تو پاکستان کی سیکیورٹی ایجنسیاں پاکستان میں موجود منصوبہ سازوں زکی الرحمن لکھوی کو پکڑ کر جیل میں نہ ڈالتیں. اگر وہ ممبئی حملوں میں ملوث نہیں ہیں تو انکو جیل میں کن الزامات پر ڈالا ہے؟

      ویسے اس بھارتی آفیسر کا بیان پڑھنے کے بعد آپکے ذہن میں کبھی یہ سوال اٹھا ہے کہ اس آفیسر نے یہ بیان کیوں دیا ہے اور اس نے یہ بیان دیکر اتنا بڑا رسک کیوں لیا ہے؟

      کیا اسکا ضمیر جگ اٹھا ہے؟

      کیا اسے پاکستانیوں سے کوئی ہمدردی ہو گئی ہے؟

      آخر اس نے عدالت میں جا کر یہ بین دینے کی بجائے میڈیا کو کیوں استعمال کیا ہے؟

      کیا اس نے اپنی بات کے حق میں کوئی ثبوت فراہم کیا ہے؟

      اور سب سے بڑھکر یہ کہ جس آئی ایس آئی پر بھارت نے ان حملوں میں ملوث ہونے کا الزام لگایا تھا وہ کیوں چپ ہے؟

  7. Ahmed says:

    Ghar mein batha duz duzz band keroo aur nikal kar kisi Hindi k sath kaam keroo tu you will get to know their real colour. From Cricket to water they have done eveyrthing to destroy you. Bada Ayee Aman ki Asha ka Maama Tatooo.

    • M Khan says:

      @Ahmed,
      I have worked with them , there are good and bad in every nationality. What is your problme. You guys are using this for over 65years to fool people. If Kashmir problem is solved, you guys will bring something new. Just fox our house b4 throwing stones at other.

  8. Javed Rana says:

    Bawa Saheb,
    آپکی باتیں درست ہیں لیکن کسی ملک کی سیکیورٹی ایجنسی یا حکومت اپنے ہی ملک میں خون خرابہ کبھی نہیں کرتی ہے اور نہ ہی بے گناہ لوگوں کو قتل کرتی ہیں.

    ever heard of ISI??

  9. Ahmed says:

    M Khan, Our house is burning because of others and they are on the top. The difference is we have Tatoo bikaoo loog ready to destroy Pakistan specially our Media and Bawa type ignorants. For instance can you give me the explanation about Ajmal Kassab being Pakistani National and his death was a drama. Sarbajeet Sing was highlighted Hero by Pakistani Media and than he was handed over to India after death. Such RAW Terrorists are awarded state funeral and we are quiet while they have gone to United Nation against us..We have to stand firm against our enemies. I suggest you to read and search more before your write something for them. we have problem because….We are suffereing because of them and they want us to be a fail state. Admit this

    God bless Pakistan

    • M Khan says:

      @Ahmed,
      You pick teh bits and pieces which suits you.
      Lets discuss teh whole thing?
      Isn’t it true we fool our people that we fought 1965 and 1971 wars which we lost.The india cebtric forreign policy was created by who and why?
      What we have achieved.
      Then after 1980 we fought a war based on the premesis that Russia is coming to take overa nd then go to warm water. We fought a proxy war for US and after that we wtried to us ethat to have a proxy war agianst India in Kashmir. This is started by same institution who want to continuw the india cebtric policy so they get foreign aid and make money. and people get nothing.
      The things get out of hand now with these so called non state actors use the smae institution and black mail them to their advantage.
      The conspiracy theorist are active so they can keep their agenda alive.
      tell me if i am wrong , i can start from 1947, 0r 1956 or 1971 or 1977 or 1980 or 1990 whatever suits you.
      We as a nation have to decide what we want? Donot give slogan that we want islamic state, need real plan what to do, how to do. Enogh slogans and fooling people in the name of religion.
      I was so surprised when people object why Nawaz Sharif went to China first instead of Mecca as if he need a certifucate form these self righteous people to be a good Muslim,

    • Bawa says:

      ماما پاکستان کا

      کیا پاکستانی عوام سے منہ پر چھتر کھا کر پاکستان کا ماما بنتے تمہیں شرم نہیں آتی ہے؟؟؟؟

      تمہارا بے غیرت خان پاکستان میں سیکیورٹی معاملات پر ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس چھوڑ کر اپنے انگریز آقاوں کی تقریب اٹنڈ کرنے علاج کے بہانے برطانیہ بھاگ گیا ہے اور تم یہاں پاکستان کے مامے بننے کی کوشش میں لگے ہوئے ہو

      .
      .
      [img]https://fbcdn-sphotos-a-a.akamaihd.net/hphotos-ak-ash4/1001180_523437231038798_411373691_n.jpg[/img]
      .
      .

      کیا الیکشن کے نتائج نے تمہیں تمھاری اوقات نہیں بتا دی ہے کہ عوام تمہارے منہ پر تھوکتے ہیں اور تمہیں نا پسند کرتے ہیں

      اب پاکستان کے مامے بننے کا ڈرامہ اور رنڈی رونا بند کرو

  10. deevav says:

    @
    Ahmed

    Your idea is right. But your approach is wrong. You should not be so full of venom against your own people while responding. BAWA gave you a reply I have not seen him giving to any one before.

    I agree that most of Pakistan’s problems today are due to Indian hegemony in the region. And US and UK’s continuous support of India. Fighting 2 wars with India and claiming victory is a grave mistake of we Pakistanis because we have been taking things which we like and ignoring others when these do not suit us. Like MKHAN talked about 65 and 71 wars but forgot conveniently about 99 war of Kargil. Why? Because then Mush is to be blamed and Nawaz Sharif gets credit.

    Because he is a MQM and mush’s supporter, recently converted to PTI support after being out thrown and out witted by both MQM and mush. Both are difficult to defend in the company of educated people so when they join some discussion forum then they prefer PTI identity.

    Hope you will understand that discussing indecently with people here will not lead you any where and discussing about India with Mkhan is as if debating with an Indian.

    • M Khan says:

      @Deevav,
      First i mentoioned the institution that is pushing the india centric policy and you know hwich insititution is that. (ARMY) so that mean even 1999 Kargil was also wrong. I never support any Military action that that insititution stated on its own to fool people.
      Now you seems to have either IK Phobia or MQM Phobia. I am a centrist who say things as they are , good or bad. But you seems to habe self righteous attitude.
      Rememebr, i still waiating for that Oil statement you metioned to fool people.
      Educated, tell me how many degrees you have ? I have double master from USA top university. Also i studied 2 years in Malayisia Islamic university.Waiting for your credentials and also that OIL Statement reference.
      You only spread venom. This is Ramadan, atleast stop this nonsense and saying things about fellow Muslim.
      You want to Hate india , go ahead but tell me what it gets you? Fooling people.

  11. deevav says:

    @
    BAWA

    No matter how you try to stop IK from going to London, he would go because he had to. You know Ramada Mubarak was starting and he had to to London for collecting Zakat from muslims in UK. Who cares about National security policy when it is a matter of one’s years earnings?

    • Bawa says:

      بھائی جی

      وہ زکات اکٹھی کرنے نہیں بلکہ عیاشی کرنے گیا ہے

      ولایتی شراب اور گوریوں کا برہنہ ڈانس دیکھنے کا اسکے نزدیک رمضان المبارک سے بہتر مہینہ کون سا ہو سکتا ہے؟

      شرم بے شرم بے غیرت کو کیوں نہیں آتی؟

  12. Bawa says:


    مثالی قیادت؟؟؟؟؟؟؟؟

    لکھ دی لعنت تے در فٹے منہ
    .
    .

    [img]http://e.jang.com.pk/07-20-2013/lahore/images/1830.gif[/img]

  13. Ahmed says:

    Many indian agents in Pakistan and i haven’t seen a signle Indian talking about Aman Ki Aasha and good relations with Pakistan or anything.

    IF you are from PMLN/Q/PPP/PTI no problem we can discuss but people supporting indian within Pakistan.

    ZEROOOO TOLERANCE….. They have done every bit to destroy you openly. You can not play Cricket because of India. Openly accepted by everyone but not by our media and certain indian fans in Pakistan….

    Very sad but true…

    God bless Pakistan

    • M Khan says:

      @Ahmed,
      No one need a certificate from you to be a Patriotic Pakistani. We should look at ourselces, we donot need enemies to destroy us.
      We played with emotions for last 66 years and look what we have. education standard, Corruption index, economy. Tell me what we we have achieved. Blaming others for our problems tat we ourself have created thats is the easiest way.
      As for Cricket. It was not India, we bring Srilankan when no one want to come and what we have done to them. Who can come.
      Now blame that on India, USA or jewish lobby too.

    • Bawa says:

      بھائی جی

      یہ ہمارا المیہ ہے کہ جس کو اسکی اوقات دکھائی جاتی ہے وہ اپنی اصلاح کی بجائے کاٹنے کو بھاگتا ہے

      یہ بے غیرت خان اور اسکے ممی ڈیڈی پیپسی برگر باتوں میں پاکستان کے مامے بنتے ہیں لیکن جب عملی طور پر ملکی معاملات اور مسائل کا حل نکالنے کی بات آتی ہے تو بھاگ کر اپنے غیر ملکی آقاوں کی گود میں جا بیٹھتے ہیں

      بے غیرت خان کے بے غیرت حامیوں کو شرم کبھی نہیں آتی

      :) :)

  14. M Khan says:

    @Bawa you said:
    بھائی جی

    وہ زکات اکٹھی کرنے نہیں بلکہ عیاشی کرنے گیا ہے

    ولایتی شراب اور گوریوں کا برہنہ ڈانس دیکھنے کا اسکے نزدیک رمضان المبارک سے بہتر مہینہ کون سا ہو سکتا ہے؟

    شرم بے شرم بے غیرت کو کیوں نہیں آتی؟

    So you mean people in UK and othere western countries do not Fast or Pray during Ramadan.

    Shame on you ..

    • k says:

      ofcourse!in Europe and America only kufar or by name muslim munafiqeen live.they don’t pray or fast…(islam forbids muslims from living in kufar lands specially at times of ar and conflicts like present,so the people who are in kufar countries say good buy to whatever little relation they already have with islam)

    • Bawa says:

      خان جی – تمھاری دم پر آویں پاؤں آ جاتا ہے

      آپ خود ہی بتا دیں کہ بے غیرت خان پہلی رمضان المبارک کو دن دیہاڑے ہاتھ میں جام تھامے برہنہ گوریوں کی محفل میں روزہ رکھ رہا ہے یا افطار کر رہا ہے؟؟؟؟؟؟؟

      بے غیرت خان کی ناجائز حمایت کرتے شرم تمہیں مگر نہیں آتی

      😉 😉

    • Bawa says:

      مغربی ممالک کے رہنے والے مسلمان اسلامی ممالک میں رہنے والے مسلمانوں کے مقابلے میں اپنے مذھب کے بارے میں زیادہ حساس ہیں

      اسلامی ممالک میں رہنے والے مسلمانوں کو اس بات کی کوئی فکر نہیں ہے کہ انکے کالے کرتوتوں کی وجہ سے دنیا کو مسلمانوں کے بارے میں کیا پیغام جاتا ہے جبکہ مغربی ممالک میں رہنے والے مسلمان خود کو اپنے مذھب کے نمائندہ سمجھتے ہیں

      مغربی دنیا میں مسلمانوں کی تعداد میں دن بدن اور بڑی تعداد میں اضافہ اسلامی ممالک کے مسلمانوں کی گھٹیا حرکتوں کی وجہ سے نہیں بلکہ انہی مغربی ممالک میں بسنے والے مسلمانوں کے متاثر کرنے والے کردار کی وجہ سے ہو رہا ہے

      مغربی ممالک میں بسنے والے مسلمانوں کے قول و فعل میں تضاد نہ ہونے کے سبب یہ مسلمان اسلامی ممالک میں بسنے والے مسلمانوں سے لاکھ درجے بہتر ہیں

  15. Bawa says:

    کیا انتخابات میں عوام سے چھتر کھانے کا انقلابیوں کے چھوٹے سے ذہن پر اتنا گہرا اثر ہوتا ہے؟؟؟؟؟؟

    بابے نیازی کی پارٹی کا سیکریٹری اطلاعات کھل کر وضاحت کر رہا ہے کہ پی ٹی آئی اور پی پی پی ایک ہی پارٹی ہے

    ہم تو پہلے ہی جانتے تھے یہ پی ٹی آئی دراصل پی پی پی کی بی ٹیم ہے لیکن یہ ان پیپسی برگروں کے ڈوب مرنے کا مقام ہے جو پی ٹی آئی کے پی پی پی کی بی ٹیم ہونے سے انکار کر رہے تھے
    .
    .
    [img]http://i1.tribune.com.pk/wp-content/uploads/2012/03/344274-imranisrarannounce-1330634250-640-640×480.jpg[/img]
    [img]http://oi43.tinypic.com/fxgu2t.jpg[/img]

  16. Ahmed says:

    Ghatia Bawa even if one accepts Imran and all other political parties are destroying Pakistan. What good PMLN is doing for Pakistan?????

    Kashkool laker IMF se paisay laker Hamza Shahbaz k Tamatroon ki prices check kerna ka ilwaya???? Please dont come up with negative propaganda against other parties show us what good PMLN govt is doing for Pakistan????

    Imli / Lemon use kerein agar tamaater mehngay hein. Shame on you. Loog paratha kion nahin khata bhooka kion rehte hein?????

    • Bawa says:

      [img]http://images.wikia.com/clubpenguinfanon/images/archive/8/8a/20100703023430!Burger_Khan_logo.png[/img]
      [img]https://pbs.twimg.com/media/BKhP63mCIAEc524.jpg:large[/img]

  17. Bawa says:

    [img]https://fbcdn-sphotos-h-a.akamaihd.net/hphotos-ak-frc1/1004042_431966186902105_1653246128_n.jpg[/img]
    .
    .


    خیالی وزیر اعظم بے غیرت خان
    انتخابات میں منہ کالا کروانے کے بعد اب ماڈلنگ کیا کرے گا

    😀 😀

  18. Bawa says:

    سنا ہے بے غیرت خان المعروف بابے نیازی کی انقلابی قیادت کی بیویاں ولایتی شراب پیتی پلاتی ہیں

    کوئی انقلابی اپنے سندھ اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر ثمر علی خان سے سفارش کرکے اسکی بیوی اور بزرگ اداکارہ عتیقہ اوڈھو سے ولایتی انقلابی شراب کی دو بوتلیں لے دے تو ہم بھی نعرے لگائیں گے کہ

    عتیقہ اوڈھو آئے گی – ولایتی شراب پلائے گی

    😀 😀

    [img]http://img2.allvoices.com/thumbs/image/609/480/81526359-vice-president.jpg[/img]

    [img]http://3.bp.blogspot.com/-aYiZT-lt_pM/TfhPrtb4cpI/AAAAAAAAANU/fm0YlwC_55I/s1600/248272_136534993091383_100002046500706_238758_8361027_n.jpg[/img]

    [img]http://e.dunya.com.pk/news/2013/June/2013-06-06/LHR/detail_img/396462_58656596.jpg[/img]

    [img]http://4.bp.blogspot.com/-oM5sXAI3CC0/TjrIRRbul5I/AAAAAAAAAv0/uK_wJ9R7bzk/s1600/atiq.JPG[/img]

  19. rangbaaz says:

    Dalaal shareef jis ke baaray mein MQM ne kaha tha keh Nawaz Shareef apni baiti ki dalaali karta hai aaj bahot bara dalaal saabit huwa hai aur MQM waloon ko ghar ja ke paoon pakar ke apni dalaali saabit kar chuka hai.

  20. Bawa says:

    کیا ایم کیو ایم کی آدھی بات پر یقین کرنا اور آدھی بات نظر انداز کرنا منافقت کی انتہا نہیں ہے

    کیا ایم کیو ایم کی اس بات پر بھی یقین ہے جو الطاف حسین نے اپنے تاریخی خطاب میں کہی تھی


    وہ کتے کا پلّا مجھے گالیاں دے رہا ہے … اسکی ایک ناجائز بیٹی بھی ہے

    پیر معجزے شاہ کے یہ الفاظ سنہری حروف میں لکھنے کے قابل ہیں. کتنی خوبصورتی سے اس نے گالیاں دینے والے کی نسل کی نشاندہی کی ہے اور سب سے بڑھکر شرافت اور شائستگی کا دامن بھی ہاتھ سے نہیں چھوڑا ہے

    آفرین ہے – پیر معجزے شاہ پر، یہی اہل زبان اور زبان سے نابلد لوگوں میں فرق ہوتا ہے

    😀 😀 :) :) :mrgreen: :mrgreen:

    • M Khan says:

      @Bawa,
      The disvussion at this time is PML-N and MQM. What IK and Altaf has to doo with thiis. You mean as long as someone is against IK he is ok with NS. Is that it?

  21. Ahmed says:

    Joker Bawa is broadcasting his beloved uncle Altaf Bhai…. Let him express his feelings :) Koi baat nahin take it easy…. Aga Aga dekho hota hai kia. Once again congrats to all the PMLN supporters for their uncle and brother of Nawaz and Shahbaz…

  22. DEEVAV says:

    THIS SITE HAS BEEN STRUCK BY A VIRUS CALLED “BURGERS”. THEY ARE UNETHICAL, UNCULTURED, UNCIVILISED AND ARE TRULY REPRESENTING TO WHAT BACKGROUND THEY BELONG TO BY THEIR CHOICE OF WORDS.

    AHMED YOU WERE GIVEN A VERY GOOD THUMPING REPLY BY BAWA WHEN YOU CROSSED THE LIMIT BUT ALAS YOU DID NOT UNDERSTAND. YOU PEOPLE ARE BACK AGAIN WITH THE SAME THIRD CLASS LANGUAGE AND CHOICE OF WORDS THAT IS PATENT WITH PTI AND ACKNOWLEDGED BY ALL. AFTER THE DRUBBING IN THE RECENT ELECTIONS, THIS DISEASE HAS EVEN DETERIORATED FURTHER.

    YOU WILL KEEP ON BURNING IN YOUR RAGE WITHOUT RELIEF. SHOW YOUR BACK GROUND AND LET PEOPLE KNOW WHERE ARE YOU FROM.

    BURNOL HAS NOW STOPPED HELPING YOU BUGERSSSSSSS.

  23. DEEVAV says:

    @
    MHAN

    I could not come to the blog for quite some time. Just saw your splendid comments.

    Mkhan says,

    “Educated, tell me how many degrees you have ? I have double master from USA top university. Also i studied 2 years in Malayisia Islamic university.Waiting for your credentials and also that OIL Statement reference.”

    My My. Really????

    You don’t look like being so educated from your writing potential.

    Also if you load books in dozen upon an ASS, it would do him no good.

    You are a typical rolling balling type of a person. Yu have mentioned about yoyr degrees, all earned from abroad, please also mention two things. You could not get admission in any university in Pakistan? And like Baber Awan and Amir Liaqat Hussain had to seek the degrees from abroad.

    Second. Please clarify which political party your support. And be honest just for a change.

    • M Khan says:

      @Deevav,
      You are something, when u donot have an argument , you go to personality. I never question yr personality i go after the message. Now since you have asked, i was the one who could not get in Engineering college due to Quota system when they ask my Father place of birth. If i would have born in Punjab or in any other place i could get in the engineering college in Karachi. Anyway i did my Masters in Physics. Is that enough for you.
      Now for the political party, i was with supporter during university days and left in 1980. So i donot belong to any like you who support NS and was cursing few days ago aginast Karachi people. Now your leader is become brother of Terrorist Altaf so now he is in yr good bood . Oh you sais NS used himto get President Votes only . That shows your leader character.
      Keep teh discussion to Altaf and NS donot try tp chnage topic to IK as he is not teh topic here.
      Any thing more.

  24. deevav says:

    @
    Mkhna

    I got personal or you tried to impress the bloggers by proudly displaying your qualifications specially those abroad, and asking for my qualifications. Why did you want that for? I tell you I am a plain villager and a common man.
    Look at your judgment now how fair you are. You call for qualifications and then tell others that they get personal.
    Please clairfy this part of your statement which is quite vogue as expected:-

    Now for the political party, i was with supporter during university days and left in 1980.

  25. Bawa says:

    کل میں نے اسی تھریڈ پر کہا تھا کہ
    .
    .

    بظاہر انڈین سی بی آئی کے سابقہ اہلکار کا بیان ناقابل یقین اور سی بی آئی کی اندرونی چپقلش کی نشاندھی کرتا ہے. اگر اس کے بیان میں ذرا سی بھی حقیقت ہوتی تو آئی ایس آئی میمو گیٹ سکینڈل کی طرح چیخ چیخ کر آسمان سر پر اٹھا لیتی. پھر انڈین سی بی آئی کے سابقہ اہلکار کے بیان پر بغیر کسی ثبوت کے کوئی یقین بھی کیسے کر سکتا ہے؟

    چونکہ ممبئی حملوں کے پاکستان میں موجود منصوبہ سازوں زکی الرحمن لکھوی، ضرار شاہ، ابو القمعہ، محمد امین صادق، شاہد جمیل رضوی، جمیل احمد اور یونس انجم وغیرہ سے آئی ایس آئی اور ایف آئی اے خود تفتیس کر چکی ہیں اور وہ سب حقائق جاتی ہیں اس لیے انہوں نے اس بیان کو کوئی اہمیت نہیں دی ہے. یہ بات تو اب ڈھکی چھپی نہیں ہے کہ اجمل قصاب پاکستانی شہری تھا اور اسکا تعلق لشکر طیبہ سے تھا

    ویسے اس بھارتی آفیسر کا بیان پڑھنے کے بعد آپکے ذہن میں کبھی یہ سوال اٹھا ہے کہ اس آفیسر نے یہ بیان کیوں دیا ہے اور اس نے یہ بیان دیکر اتنا بڑا رسک کیوں لیا ہے؟

    کیا اسکا ضمیر جگ اٹھا ہے؟

    کیا اسے پاکستانیوں سے کوئی ہمدردی ہو گئی ہے؟

    آخر اس نے عدالت میں جا کر یہ بین دینے کی بجائے میڈیا کو کیوں استعمال کیا ہے؟

    کیا اس نے اپنی بات کے حق میں کوئی ثبوت فراہم کیا ہے؟

    اور سب سے بڑھکر یہ کہ جس آئی ایس آئی پر بھارت نے ان حملوں میں ملوث ہونے کا الزام لگایا تھا وہ کیوں چپ ہے؟

    .
    .

    آج اسکا ثبوت سامنے آ چکا ہے
    .
    .

    [img]http://e.dunya.com.pk/news/2013/August/2013-08-28/LHR/detail_img/563021_64356634.jpg[/img]

Leave a Reply